آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
منگل12؍ذیقعد 1440ھ 16؍جولائی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

الیکشن کمیشن آف پاکستان میں سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی صاحبزادی اور مسلم لیگ نون کی نائب صدر مریم نواز کے پارٹی عہدے کے خلاف کیس کی سماعت ہوئی۔

دورانِ سماعت مریم نواز نے اپنا تحریری جواب الیکشن کمیشن میں جمع کرا دیا، جس میں انہوں نے کہا ہے کہ آئین اور الیکشن ایکٹ میں ایسی کوئی ممانعت نہیں ہے۔

مریم نواز نے جواب میں کہا ہے کہ ایسی کوئی شرط نہیں کہ سزا یافتہ فرد پارٹی کا عہدیدار نہیں ہو سکتا، آمریت میں عوامی نمائندوں کو انتخاب سے روکنے کے لیے ایسے قوانین ہوتے تھے۔

انہوں نے اپنے جمع کرائے گئے جواب میں کہا ہے کہ سیاسی جماعتوں کے آرڈر 2002ء میں شق تھی کہ سزا یافتہ شخص پارٹی عہدہ نہیں رکھ سکتا۔

مریم نواز نے الیکشن کمیشن میں جمع کرائے گئے جواب میں یہ بھی کہا ہے کہ پارلیمنٹ نے الیکشن ایکٹ 2017ء میں اس شق کو ختم کر دیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے کیس کی سماعت 4 جولائی تک ملتوی کر دی۔

واضح رہے کہ مریم نواز کے خلاف پی ٹی آئی کی رکن قومی اسمبلی ملیکہ بخاری نے الیکشن کمیشن آف پاکستان میں درخواست دائر کر رکھی ہے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں