آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
اتوار 20؍رمضان المبارک 1440ھ26؍مئی 2019ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

سی پیک سے پاکستان کے تجارتی حجم میں دو کھرب ڈالر تک اضافہ ممکن ، مقررین

اسلام آباد (کامرس رپور ٹر ) سی پیک کو ناکام بنانے کے لیے پروپیگنڈہ اور سازشیں جاری ہیں لیکن یہ منصوبہ رکنے کے لیے نہیں اور تمام سازشیں ناکام ہونگی ، سی پیک میں چین اور پاکستان دونوں کے لیے مساوی فوائد ہیں، ان خیالات کا اظہار تحقیقی ادارہ مسلم انسٹیٹیوٹ کے زیر اہتمام ’’ سی پیک موجودہ صورتحال کا جائزہ‘‘ کے عنوان سے منعقدہ سیمینار میں مقررین نے کیا، سیمینار کی صدارت نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کے پروفیسر ضمیر اعوان نے کی جبکہ مقررین میں صاحبزادہ سلطان احمد علی ، بین الاقوامی تعلقات عامہ شنگھائی کے ڈپٹی ڈائریکٹر ڈاکٹر لی کیاشنگ، بریگیڈئر ریٹائرڈ آصف ہارون راجہ، سابق صدراسلام آباد چیمبر آف کامرس ظفر بختاوری، انسٹیٹیوٹ آف لاجسٹک اینڈ ٹرانسپورٹیشن ، یو کے ڈاکٹر یاسر ملک ، بین الاقوامی تعلقات عامہ شنگھائی کے ریسرچ ایسوسی ایٹ ڈاکٹر یانگ فنگ اور مسلم انسٹیٹیوٹ کے محقق اسامہ بن اشرف شامل تھے ، مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سی پیک عالمی نوعیت کا پراجیکٹ ہے جس کی اہمیت پاکستان کے لئے بہت زیادہ ہے ، سی پیک سے پاکستان کے تجارتی حجم میں ایک سے دو کھرب ڈالر تک اضافہ ممکن ہے، ہمیں ہر پلیٹ فارم پر پاکستان کی بقا اور ترقی کے لئے سی پیک کی حمایت کرنی ہے اورپاک فوج کے ساتھ مل کر اس کا دفاع

کرنا ہےمقررین نے اس بات پر زور دیا کہ اب مشرق کے عروج کا وقت ہے اور سی پیک منصوبہ ہی مشرق کے عروج کی بنیاد ہے - سی پیک ہماری لوکل انڈسٹری اور مصنوعات کو بین الاقوامی مارکیٹ میں پہنچانے کا باعث ہوگا ۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں