آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ6؍ ربیع الثانی 1440ھ 14؍دسمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
رانی پور (نامہ نگار) بینائی سے محروم پانچ مریضوں کی گمس میں آنکھوں کے قرنیہ کی مفت پیوند کاری کی گئی۔ کامیاب ٹرانسپلانٹیشن سے مریضوں کی بینائی واپس آ گئی۔ کراچی کے ماہر ڈاکٹروں شاہد عظیم مرزا اور ڈاکٹر اسد عظیم مرزا نے پیر عبدالقادر شاہ جیلانی میڈیکل انسٹیٹیوٹ گمس میں داخل بینائی سے محروم پانچ مریضوں عزیز اللہ شر، عبدالوہاب چانڈيو ،محمد ابراہيم، سعید احمد بروہی اور محمد دائود سومرو کی آنکھوں کے قرنیہ کی کامیاب پیوند کاری کی۔ آنکھوں کے آئی بال کا بیرونی پردہ خراب ہونے سے بینائی ختم ہو جاتی ہے اور پیوند کاری کے بغیر ان کا علاج ممکن نہیں۔ گمس میں مریضوں کی مفت پیوند کاری کی گئی ہے صرف ایک مریض کے پیوند کاری عمل پر ڈیڑھ لاکھ روپے خرچ آتا ہے جب کہ آئی بال کا قرنیہ سری لنکا اور امریکا عطیے کے طور پر فراہم کرتے ہیں سری لنکا اور امریکا میں لوگ اپنی زندگی میں وصیت کرتے ہیں کہ ان کے مرنے کے بعد فوری ان کی آنکھیں نکال کر کسی دوسرے ضرورتمند شخص کو عطیہ میں دی جائیں۔ مرنے کے بعد دو گھنٹے کے اندر انتقال کرنے والے شخص کی آنکھیں نکال کر محفوظ کی جاتی ہیں جو اکیس دن تک محفوظ رکھی جا سکتی ہیں۔ گمس کے ڈائریکٹر رحیم بخش بھٹی نے جنگ کو بتایا کہ گمس میں ہر ماہ پانچ افراد کی آنکھوں کے قرنیہ کی پیوند کاری کی جائے

گی۔ آئندہ ماہ امریکا نے پانچ قرنیہ عطیہ کے طور پر دینے کی یقین دہانی کرائی ہے۔ کمشنر سکھر ڈویژن عثمان غنی چاچڑ نے گمس پہنچ کر پیوند کاری کئے گئے مریضوں کی عیادت کی اور ڈائریکٹر رحیم بخش بھٹی کو مبارک باد دی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں