آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ 9؍صفر المظفّر 1440ھ 19؍اکتوبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
سہون(نامہ نگار ) نواحی گائوں شالمانی کے قریب غیر قانونی کانٹے (وزن) کی جبراً ہزار روپیہ وصولی جاری، ایک ماہ گزرنے کے باوجود بھی انتظامیہ تماشائی بنی ہوئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق سہون شریف کے نواحی گائوں شالمانی نزد سن کے قریب غیر قانونی کانٹے پر جبراً ایک ہزار روپے وصول کئے جار ہے ہیں۔ بھاری گاڑیوں جن میں ٹرک ، ٹریلر اور دیگر گاڑیوں سے جبرا فی کس ہزار روپیہ مسلسل لیا جا رہا ہے۔ گزشتہ روز ٹرک ڈرائیورز نے روڈ بلاک کر کے اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا جن میں مرتضیٰ بگھیو، قمرالدین پنہور، نواز ملاح اور دیگر نے کہا کہ ہم سے زبردستی وزن کراکر ایک ہزار روپے وصول کئے جا رہے ہیں جو سراسر زیادتی ہے نہ دینے پر ہم پر تشدد کیا جا رہا ہے۔ ہمارے دو ڈرائیور جن مین جہانداد خان اور جہانگیر خان پر سخت تشدد کیا گیا ہے اور انہیں تشویشناک حالت میں حیدرآباد اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ کیسی اندھیر نگری ہے کہ آج ایک ماہ گزر چکا ہے کوئی بھی ہمارا پر سان حال نہیں اور انتظامیہ تماشائی بنی ہوئی ہے ہم سندھ کے وزیر اعلیٰ سید مراد علی شاہ اور آئی جی سندھ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ غیر قانونی کانٹے کو ختم کیا جائے اور ہمیں انصاف فراہم کیا جائے بصورت دیگر ہم آئندہ جمعے کو انڈس ہائی وے مکمل بلاک کر کے دھرنا دینگے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں