آپ آف لائن ہیں
منگل9؍ذوالحجہ 1439ھ 21؍اگست 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن

نوا زشریف فیملی فلیگ شپ ضمنی ریفرنس، دستاویزات براہ راست وصول کیںنہ تصدیق کنندہ کوجانتا ہوں، گواہ کا اعتراف

اسلام آباد(نمائندہ جنگ) احتساب عدالت میں پیر کو پاکستان مسلم لیگ (ن) کے قائد محمد نواز شریف فیملی کے خلاف فلیگ شپ ضمنی ریفرنس کی سماعت کے دوران دوسرے گواہ عبدالحنان پروکیل صفائی خواجہ حارث نے جرح مکمل کی۔گواہ نے اعتراف کیا کہ دستاویزات براہ راست وصول کیں نہ تصدیق کنندہ کوجانتا ہوں، احتساب عدالت میں عبدالحنان پر جرح مکمل ہوگئی،نیب پراسیکیوشن رویے پرخواجہ حارث نے روسٹرم چھوڑدیا، وکیل صفائی کی سپریم کورٹ میں مصروفیت کی وجہ سے سماعت کے آغاز پر ہی خواجہ حارث نے استدعا کی کہ نواز شریف کی طبیعت خراب ہے انہیں جانے کی اجازت دی جائے جس پر فاضل عدالت نے انہیں جانے کی اجازت دے دی۔ جرح کے دوران سماعت 7 مارچ تک ملتوی کردی۔ نواز شریف، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر عدالت میں پیش ہوئے۔ استغاثہ کے گواہ عبدالحنان نے اعتراف کیا کہ اس نے دستاویزات براہ راست وصول نہیں کیں۔خواجہ حارث نے استفسار کیا کہ ان دستاویزات کے درست ہونے سے متعلق کوئی سرٹیفکیٹ نہیں دیاگیا۔ جس پرگواہ عبد الحنان نے کہا کہ دستاویزات پر موجود فارن اینڈ کامن ویلتھ کے تصدیق کنندہ کو ذاتی طور پرجانتا ہوں نہ ہی آف شور کمپنیز سے متعلق دستاویزات فراہم کرنے والے مجاز افسر کو ،کسی بھی کمپنی کےآفیسر یالینڈ رجسٹری کے آفیسر نے دستاویزات کی تصدیق

نہیں کی۔گواہ نے مزیدبتایا کہ نائنتھ آرڈر آف کنفرمیشن عدالتی ریکارڈ پرموجود ہے نہ ہی اسے تصدیق کے لیے نوٹری پبلک کو بھجوایا،دستاویزات کی تصدیق کرنے والےنوٹری پبلک کے نام اور تاریخ بھی درج نہیں۔ دوسرے گواہ پر جرح مکمل ہونے کے بعد فاضل عدالت میں وکیل صفائی خواجہ حارث نیب پراسیکیوٹراور جج کے درمیان دلچسپ مکالمہ ہوا،خواجہ حارث نیب پراسیکیوشن کےرویے پر روسٹرم چھوڑ کرچلے گئے، وہ بولے آپ نے میرا وارنٹ جاری کرنا ہے تو کردیں۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں