آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ 9؍صفر المظفّر 1440ھ 19؍اکتوبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
سجاول (نامہ نگار)ضلع سجاول میں محکمہ صحت خسرے پر قابو پانے میں بری طرح ناکام ہوگیا ۔مزید تین بچے چل بسے ،گرمی شروع ہوتے ہی خسرہ کے باعث معصوم بچوں کی ہلاکتوں میں شدت کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے ۔گزشتہ روز چوہڑ جمالی کے رہائشی نو سالہ کلثوم بنت حنیف لاکھاٹیو خسرہ کے باعث جاں بحق ہو گئی جبکہ بنیادی صحت مرکز نودو بھارن کے ملازم گل حسن لوٹھیو کا تین سالہ معصوم جاوید لوٹھیو اور جاتی چوک کے رہائشی سومار ماچھی کی تین سالہ بیٹی خسرہ میں مبتلا ہوکر ہلاک ہو گئی ہے ۔خسرہ کے باعث ہلاک شدگان کی معلومات کے لئے رابطہ کرنے پر صحت مرکز نودو بھارن کے انچارج ڈاکٹرامر مصطفیʼسوہو اور ڈیوٹی ڈاکٹر مہناز غوری نے تصدیق کر تے ہوئے بتایا کہ علاقے میں خسرہ تیزی سے پھیل رہا ہے ، نیز خسرہ کی ویکسین اور بچوں کے علاج کی اشد ضرورت ہے۔ یاد رہے کہ قبل ازیں ضلع سجاول کی تحصیل میرپور بٹھورو کے 6 معصوم بچے خسرہ کے باعث ہلاک ہو چکے ہیں ۔نوابشاہ کے بیورو رپورٹ کے مطابق محکمہ صحت کی ٹیم نے خسرہ کے ٹیکے لگنے سے تین بچوں کی مبینہ ہلاکت کی تحقیقات شروع کر دی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں