آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات8؍صفر المظفّر1440ھ18؍ اکتوبر 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
کراچی (ثاقب صغیر /اسٹاف رپورٹر) نیشنل کائونٹر ٹیرارزم اتھارٹی (نیکٹا) کے تحت کام کرنیوالا جوائنٹ انٹیلی جنس ڈائریکٹوریٹ(جے آئی ڈی) رواں سال جون میں فعال ہوجائیگا جس کا آئی ایس آئی، ایم آئی اور آئی بی سمیت دیگر30خفیہ ادارے حصہ ہونگےاور بریگیڈیئر کے عہدے تک کا افسر جوائنٹ انٹیلی جنس ڈائیریکٹوریٹ کا ڈائریکٹر جنرل ہوگا اور یہ ڈائریکٹوریٹ تمام خفیہ اداروں کے درمیان موثر روابط کو یقینی بنائیگا۔ قومی کو آرڈینیٹر برائے نیکٹا احسان غنی نے جنگ سے گفتگو کرتے ہوئے اس بات کی تصدیق کی کہ جے آئی ڈی کے حوالے سے تمام انٹیلی جنس ایجنسیاں ایک پیج پر ہیں ، سندھ میں بھی نیکٹا کےصوبائی سیکریٹریٹ کیلئے جگہ بھی حاصل کر لی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس سلسلے میں ڈی ایس پی رینک کے ایک افسر کو ابتدائی طور پر تعینات کرنے کیلئے سندھ حکومت سے رابطہ کیا گیا تھا اور سندھ حکومت کی جانب سے اپروول آتے ہی مذکورہ افسر نیکٹا کے دفتر میں بیٹھنا شروع کر دے گا جبکہ بعد ازاں ایک گریڈ19کا افسر نیکٹا سندھ کا چارج سنبھالے گا اور گریڈ18کے دو افسر اسکے ساتھ تعینات کیئے جائیں گے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں