آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعہ6؍ ربیع الثانی 1440ھ 14؍دسمبر2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
واشنگٹن (نیوزڈیسک)امریکہ کی شمال مشرقی ریاستوں میں شدید برفانی طوفان کے بعد انفراسٹرکچر بحال کرنے کی کوششیں جاری ہیں،حکام کے مطابق طوفان کے باعث پیش آنے والے حادثات میں نو افراد ہلاک ہوئے جب کہ 15 لاکھ افراد کو بجلی کی فراہمی معطل ہوگئی تھی جس کی بحالی کی کوششیں جاری ہیں۔طوفان کے بعد اتوار کو بیشتر علاقوں میں مطلع صاف ہوگیا تھا جس کے بعد ہزاروں سرکاری اہلکار اور کنٹریکٹر بجلی کی فراہمی بحال کرنے اور سڑکوں سے ملبہ اٹھانے میں مصروف ہیں۔طوفان کو 'بومب سائیکلون کا نام دیا گیا تھا جس کے تحت ہوا کا دباو انتہائی کم ہوجانے کے باعث انتہائی تیز اور طوفانی جھکڑ چلنے سے مشرقی ریاستوں ورجینیا سے مین تک ہزاروں درخت اکھڑ گئے اور املاک کو خاصا نقصان پہنچا ۔حکام کا کہنا ہے کہ اتوار کی دوپہر تک پانچ لاکھ افراد کو بجلی کی فراہمی بحال کردی گئی تھی لیکن اب بھی لگ بھگ 10لاکھ افراد بجلی سے محروم ہیں۔ریاست نیو جرسی کے حکام نے کہا ہے کہ بعض مقامات پر بجلی کی بحالی میں مزید دو سے تین دن لگ سکتے ہیں۔طوفان کے باعث میری لینڈ اور ورجینیا کی ریاستوں میں جمعے کو ہنگامی حالت نافذ کردی گئی تھی۔طوفان سے ہونے والے نقصانات کے بعد نیویارک اور میسا چوسٹس کے گورنروں نے بھی اپنی ریاستوں میں ہفتے کی دوپہر ہنگامی حالت نافذ کردی تھی۔طوفان

کے باعث چلنے والی ہواوں کی رفتار 145 کلومیٹر فی گھنٹہ تک تھی جس کے سبب کئی ساحلی علاقوں میں پانی آبادیوں میں داخل ہوگیا تھا۔طوفان کے باعث مشرقی ریاستوں کے درجنوں ہوائی اڈوں پر ہزاروں پروازیں منسوخ کردی گئی تھیں جب کہ تیز ہواوں کے باعث کئی مقامات پر پبلک ٹرانسپورٹ معطل اور ٹرینوں کی آمد و رفت بھی طویل تاخیر کا شکار رہی۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں