آپ آف لائن ہیں
اتوار دو شوال المکرم 1439ھ 17؍جون 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
لندن( پی اے )40فورسز کے ڈیٹا سے انکشاف ہواہے کہ انگلینڈ اور ویلز میں گزشتہ 3سال کے دوران شراب نوشی اور نشہ کرکے ڈرائیونگ کرنے کے الزام میں 25ہزار ڈرائیور پکڑے گئے ڈیٹا کے مطابق مارچ2015سے جنوری 2018کے دوران نشے میں دھت ڈرائیوروں کے ٹیسٹ کے دوران 8ہزار 336ڈرائیوروںپر حشیش کااستعمال ثابت ہوا جبکہ 3ہزار64پر مقررہ حد سے زیادہ کوکین استعمال کرکے ڈرائیونگ کرنے کاجرم ثابت ہوا۔حکومت کاکہناہے کہ حکومت کی جانب سے نئے سخت قوانین کے نفاذ کے بعد خطرناک ڈرائیونگ کے الزام میں زیادہ ڈرائیور گرفتار ہوئے ہیں۔ سڑکوں پر چلنے والوں کے تحفظ کیلئے کام کرنے والی چیرٹی بریک کا کہناہے کہ نشہ کرکے ڈرائیونگ کرنے والے ڈرائیوروں کو ایسا کرنے سے باز رکھنے کیلئے ان کے خلاف سخت کارروائی کیلئے روڈپولیسنگ پر مزید سرمایہ کاری کی جانی چاہئے۔حشیش اور کوکین جیسی8غیر قانونی منشیات کے استعمال کا پتہ چلنے کے ساتھ ہی یہ بھی ثابت ہوا کہ ڈرائیوروں نے یہ منشیات بھی مقررہ حد سے بہت زیادہ مقدار میں استعمال کررکھی تھیں۔بی بی سی کی جانب سے آزادی معلومات کے تحت حاصل کئے گئے اعدادوشمار سے انکشاف ہواہے کہ منشیات کے استعمال کے سب سے ٹیسٹ چےشائر پولیس کی جانب سے کرائے گئے۔چے شائر پولیس نے 4ہزار491 ڈرائیوروں کے ٹیسٹ کرائے جن میں سے 2ہزار377 پازیٹو نکلے،

x
Advertisement

میٹروپولیٹن پولیس نے 3ہزار 254پازیٹو ٹیسٹ کرائے، ایسیکس نے ایک ہزار857، ویسٹ مرسیا نے ایک ہزار 704 اور مرسی سائیڈ نے ایک ہزار517ٹیسٹ کرائے ڈیٹا سے ظاہرہوتاہے کہ کم وبیش 43فیصد ٹیسٹ مثبت نکلے، یہ نتائج 24 فورسز کی جانب سے فراہم کردہ اعدادوشمار کی بنیاد پر مرتب کئے گئے ہیں ۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں