آپ آف لائن ہیں
جمعہ 7؍ شوال المکرم 1439ھ 22؍ جون2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
کراچی (نیوز ڈیسک) پاکستانی فلم اور ٹیلی وژن ڈاریکٹرز کی نمائندہ تنظیم گلڈز کی کور کمیٹی نے بھارت کی ویسٹرن انڈیا سائن ایمپلائیز کے پاکستانی فنکاروں کے بھارت میں کا م کرنے پر پابندی لگانے کے بیان کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا ہے بھارتی تنظیموں کا بیان اور فیصلہ پاک بھارت دوستانہ تعلقات کے فروغ کے لئے سخت دھچکا ہے، ڈاریکٹرز گلڈز نےاپنے بیان میں کہا کہ بھارت یہ جانتےہوئے کہ فن کی سرحدیں نہیں ہوتیں پھر بھی فنکاروں پر پابندی عائد کرنے کی قرارداد پاس کی ہے۔ گلڈز نے بھارتی تنظیموں کے بیانات اور پابندی کے اعلان پر کہا ہے کہ بھارتی تنظیموں کو یہ بھی اچھی طرح معلوم ہے کہ یہ عمل بھارتی فنکار اور دیگر تنظیمیں اچھی نظر سے نہیں دیکھتیں جبکہ فن و فنکار ، ادیب ، لکھاری اور کھلاڑی دونوں ممالک میں تناوٗختم کرنے میں بنیادی کردار ادا کرتے ہیں بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ یہ انتہائی قابل احترام سوچ اور عمل ہے کہ پاکستانی فنکار بھارتی فلموں میں کام کرنے کا فیصلہ کرتے وقت خود کو ایک آزاد شہری سمجھتے ہیں اور بھارتی اقدام پاکستانی فنکاروں کے قومی تشخص کے خلاف ہے بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ تاثر قطعی غلط ہے کہ پاکستانی فنکار بھارتی فلموں اور بھارت میں کام کرنے کے لئے بے چین رہتے ہیں اعداد و شمار بھی اس تاثر کو غلط ثابت کرتے ہیں۔

x
Advertisement

بھارتی تنظیموں کا یہ اقدام دنیا میں پاکستانی فنکاروں کو بدنام کرنے اور برا تاثر دینے کی کوشش ہے۔ گلڈز کے ڈاریکٹر ز نے اپنے بیان میں مزید کہا ہے چند پاکستانی فنکاروں کی بھارت میں کام کرنے کی مرضی کو کسی بھی طرح پاکستان کی پوری فلم انڈسٹری کی خواہش نہیں کہا جاسکتا۔ ڈاریکٹرز آف گلڈز آف پاکستان نے اپنے بیان میں مزید کہا کہ پاکستانی فنکار پاکستانی ہونے پر فخر کرتے ہیں اور ہم اپنے فنکاروں ،ادیبوں کھلاڑیوں کے قومی تشخص کی حفاظت کرتے ہیں بیان میں کہا گیا ہے کہ گلڈز پاکستان سمجھتی ہے کہ بھارت کا یہ اقدام قلیل مدتی ہواور اس وقت تک کے لئے جب تک حالات معمول پر نہیں آجاتے۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں