آپ آف لائن ہیں
جنگ ای پیپر
جمعرات8؍صفر المظفّر1440ھ18؍ اکتوبر 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
کراچی ( اسٹاف رپورٹر) پاکستان اور تر کی کے مابین ایف ٹی اے پر دستخط کر نے سے پاکستان کی بڑ ی ایکسپورٹ انڈ سٹری کو کو ئی فا ئد ہ نہیں ہو گا، ترکی کی جانب سے اپنی مقامی صنعت انڈ سٹر ی کو تر جیحی سلو ک ،ایف ٹی اے اسپرٹ کی خلا ف ورزی ہو گی ۔ اس با ت کا اظہار فیڈریشن آف پاکستان چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹر ی کے قا ئم مقام صدر سید مظہر علی نا صر نے ایک بیان میں کیاہے ۔ انہوں نے کہاکہ کپڑے کی بر آمد پر ترکی کی جا نب سے سخت ڈیوٹی نا فذ کر نے سے برآمدت متا ثر ہو ں گی۔ برآمدی ڈیو ٹی پر تر کی کی جانب سے 18فیصد سے 26.4 ڈیو ٹی بڑ ھانے کا عمل جو ما ضی میں 6.4فیصد ہو ا کرتا تھا ہماری لو کل ٹیکسٹا ئل مصنوعا ت کے ساتھ زیادتی ہے ۔ ایف پی سی سی آئی کے قا ئمقام صدر نے مز ید کہاکہ تر کی کے حالیہ اقدامات کی وجہ سے تر کی میں پاکستان کی ایکسپورٹ 69فیصد تک کم ہو گئی ہے سال 2017میں 282ملین ڈالرکی ایکسپورٹ ہوئی جبکہ سال 2011 میں 906ملین ڈالر تھی۔ بغیر تحقیقی عمل اور مشاورت کے پاکستان اور تر کی کے ما بین ایف ٹی اے پر دستخط کر نے سے پاکستان کی بڑ ی ایکسپورٹ انڈسٹری کو کو ئی فا ئد ہ نہیں ہو گا مز ید یہ کہ ایف ٹی اے کے لیے کی گئی ساری محنت ضا ئع ہو جا ئے گی ۔پاکستان کے ساتھ تر کی کا یہ رویہ جی ایس پی کے فائد ہ کے حصول میں رکا وٹ بھی بنے گا۔ سید مظہر علی ناصر نے

مزید کہاکہ تر کی کو اس سلسلے میں حقیقی تجا رتی سلوک اختیار کر نا چا ہیے جس سے پاکستانی تجا رت میں حائل سا ری رکاوٹیں دور ہو نے کے علاوہ پاکستانی برآمدات میں اضا فہ بھی ہو گا جس سے پاکستان تر کی میں ایف ٹی اے کی وجہ سے پاکستانی ایکسپورٹروں میں مکمل اطمینان حاصل ہو جا ئے گا اور دیگر ممالک سے آنے والو ں کے ساتھ ایک جیسا سلو ک ہو گا۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں