آپ آف لائن ہیں
منگل9؍ذوالحجہ 1439ھ 21؍اگست 2018ء
Namaz Timing
  • بانی: میرخلیل الرحمٰن
  • گروپ چیئرمین و ایگزیکٹوایڈیٹر: میر جاوید رحمٰن
  • گروپ چیف ایگزیکٹووایڈیٹرانچیف: میر شکیل الرحمٰن
کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستانی چاول کو بھارتی چاول ظاہر کر کے بھارتی تاجروں نے انڈونیشیا برآمد کرنا شروع کردیا ہے، جس کے باعث پاکستانی برآمد کنندگان کو بہت بڑا مالی نقصان کے علاوہ پاکستان کی ساکھ کو نقصان پہنچے گا، رائس ایکسپورٹرز ایسو سی ایشن آف پاکستان (ریپ)کے سینیئر وائس چیئرمین رفیق سلیمان نے کہا ہے کہ حالیہ دنوں میں انڈونیشیا کے حکومتی ادارے بلاگ نے چاول کا ایک بڑا ٹینڈر دیا تھا جس میں مختلف ممالک سے چاول بر آمد کرنے والی کمپنیوں نے حصہ لیا تھا، اس سلسلے میں معتبر ذرائع سے انکشاف ہوا ہے کہ بعض بھارتی کمپنیاں پاکستانی چاول جو کہ دنیا کا بہترین چاول ہے اس پاکستانی چاول کو خرید کر اور بھارتی لیبل لگا کر انڈونیشیا بر آمد کر نے کی سازش کی جارہی ہے جسکی ہم بھر پور مذمت کرتے ہیں ، اس سلسلے میں(ریپ)کی جانب سے وفاقی وزارت خزانہ ، وزارت تجارت، وزارت خوراک، چیئرمین ایف بی آر، سیکریٹری ٹی ڈیپ ،چیف کلکٹر کسٹم ، کلکٹر کسٹم ایکسپورٹ اور متعلقہ کسٹم حکام کو خطوط روانہ کردیئے گئے ہیں تاکہ اس مذموم کوشش کا بر وقت سد باب کیا جاسکے ، صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ (ریپ)کے ممبران کی مسلسل محنت اور لگن سے پاکستانی چاول کی بر آمدات کا شعبہ گزشتہ کئی سال کے بحران سے نکل چکا ہے ، ا س سلسلے میں ریپ کا

وفد 18مارچ کوماریشیس کا دورہ کر رہا ہے جو کہ باسمتی چاول کی بہت اہم مارکیٹ ہے ، اس دورے کے دوران 23مارچ 2018کو یوم پاکستان کے موقع پر پاکستانی سفارتخانے کے تعاون سے بریانی فیسٹیول کا انعقاد بھی کیا جائے گا جس میں پاکستانی چاول سے مختلف چاول کی ڈشز تیار کی جائیں گی، بر یانی فیسٹیول سے ماریشیس کی مارکیٹ میں پاکستانی چاول کی بر آمدات بڑھانے کیلئے خاطر خواہ نتائج حاصل ہوں گے ، اسکے علاوہ اپریل میںریپ کا وفدد سعو دی عرب کا بھی دورہ کرے گا اس دورے کیلئے جدہ میں تعینات پاکستانی کمرشل قونصلر شہزاد احمد خان اور ریاض میں پاکستانی کمرشل اتاشی ڈاکٹر محمد عامر کا بھرپور تعاون حاصل ہے، واضح رہے کہ سعودی عرب باسمتی چاول در آمد کرنیوالا دنیا کا دوسرا سب سے بڑا ملک ہے اور سالانہ تقریباََ 15لاکھ ٹن چاول در آمد کرتا ہے جسکی مالیت تقریباََ ڈیڑھ ارب ڈالر ہے مگر گذشتہ کئی سالوں سے سعودی عرب سیلا اور اسٹیم چاول در آمد کر رہا ہے اور اس شعبے میں بھارت کو تکنیکی مہارت حاصل ہے ۔

Chatاپنی رائے سے آگاہ کریں